سوچ جب ذہن سے نکلےگی بکھر جائےگی

سوچ جب ذہن سے نکلےگی بکھر جائےگی

سوچ جب ذہن سے نکلےگی بکھر جائےگی
وقت کی بھول بھلیوں میں اترجائے گی

گرم جوشی، وہ، مَیں..آغازِ تعلق.. یعنی
یہ محبت تو فقط دو دن میں مر جائے گی

ہاتھ سب میرے گریباں تک کو اٹھے تھے
مجھ سےپہلےاسے میری یہ خبرجائے گی

روح میری جو گریزاں ہے بدن سے کب سے
جب ملی جسم سے- چونکے گی ڈر جائے گی

وہ تو ناداں تھی خلیل آخر تم نے کیا کیا یہ
با ت جب نکلے گی ساری مِرے سر جائے گی